سرائیکی طالب علمو! : منظور رحمانی ایڈووکیٹ سپریم کورٹ

سرائیکی طالب علمو!
یاد رکھیں تعلیم اور غربت ایک ساتھ نہیں رہ سکتے۔ اگر غربت کو بھگانا ھے تو تعلیم کو عام کرو۔
آپ تعلیم پر زیادہ سے زیادہ توجہ دیں اور دوسرے سرائیکیوں کو بھی تعلیم کی تلقین کریں۔ جس دن ہم سرائیکیوں نے تعلیم کا میدان مار لیا اور پنجابیوں پر تعلیم کے میدان میں سبقت لے گئے، اس دن پنجابی خود صوبہ سرائیکستان کو الگ کرنے کا نعرہ لگا رھے ھوں گے۔
آج پنجابی صوبہ سرائیکستان کی صرف اور صرف اس لیے مخالفت کر رھے ہیں، کیوں کہ ہم سرائیکی تعلیم کے میدان میں پنجابیوں سے بہت پیچھے ہیں۔ اور ہمارے ناخواندہ یا کم خواندہ ھونے کا فائدہ پنجابی اٹھا رھے ہیں۔
ڈاکٹر، انجنر ، جج، وکیل، فوجی افسر، بنکر، بزنس مین ،ِانڈ سٹر یلسٹ غرض ہر میدان مین پنجابی قابض ھے،
اس کے مقابل ہم سرائیکیوں کے حصے میں مزدوری ، کھیتی باڑی ، گدا گری ، ہماری عورتیں دوسروں کے گھروں میں کام کرتی ھے، ہمارے معصوم بچے ہوٹلوں اور ورکشاپ میں کام کرتے ہیں۔ غربت کی وجہ سے ہماری عزتیں محفوظ نہیں ہیں۔
تجارت،، صنعت ، صحافت ، ملازمت ، سب پر پنجابی قابض ھے۔
جو سلوک سرائیکیوں کے ساتھ ھو رہا ھے، یہ تو کسی غلام قوم کے ساتھ بھی روا نہیں رکھا جاتا۔
میری دعا ھے۔ اللّه پاک پاکستان کو قائم رکھے اور سرائیکی قوم کو تعلیم کا شعور آ جاۓ

پوسٹ ٹیگز:

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*
*