ملتان کے مراکز صحت اور دفاتر میں تالہ بندی ، احتجاجی دھرنا ، محکمہ ہیلتھ کو پرائیویٹ کمپنی کے حوالے نہیںکرنے دیںگے : مظاہرین

ملتان کے مراکز صحت اور دفاتر میں تالہ بندی ، احتجاجی دھرنا ، محکمہ ہیلتھ کو پرائیویٹ کمپنی کے حوالے نہیںکرنے دیںگے : مظاہرین
ملتان (نمائندہ سرائیکستان ) محکمہ صحت ڈسٹر کٹ ہیلتھ اتھارٹی ضلع ملتان کی طرف سے دفتر محکمہ صحت ،دہیی مراکز صحت،رورل ہیلتھ سنٹرز، ضلع و تحصیل ہیڈ کواٹرہسپتال میں دوسرے روز بھی تالہ بندی کی گئی اور احتجاجی دھرنا دیا گیا اور مطالبہ کیا گیا کہ محکمہ صحت کو کبھی بھی ایک پرائیوٹPHFMCکمپنی کے حوالے نہیں کرنے دیا جائے گا اگر ان کے مطالبات تسلیم نہ کئے گئے تو وہ راست اقدام پر مجبور ہوجائیں گے احتجاجی مظاہرے کی قیادت لیڈی ہیلتھ ورکرز ضلع ملتان کی صدر میڈم شازیہ ارشد ،آل پاکستان پیرامیڈیکل سٹاف پنجاب کے صوبائی جنرل سیکرٹری مقبول احمد گجر، ڈاکٹربابر شریف، ڈاکٹر وقار احمد، ڈاکٹرمحمداسد، شہبازشریف ہسپتال کے صدر ڈاکٹر محمد آصف،Allied HealthProfessional ملتان کے صدر جمیل احمد ، رانا محمد طفیل ،لیڈی ہیلتھ وزیٹرپنجاب کی صدر میڈم خالدہ پروین،ضلع ملتان کی صدر میڈم نزھت اور جنرل سیکٹری بشرہ خانم، روبینہ ناز ، ڈاکٹر عطا الرحمٰن ،پیرامیڈیکس اور ڈینگی سٹاف سے محمد فہیم نے کی اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ محکمہ صحت کے ملازمین کا استحصال اور معاشی قتل ہورہاہے۔ محکمہ صحت ایک بہت بڑا ادارہ ہے جوکہ عوام کو ترجیی نبیادوں پر علاج کی مفت سہولیات فراہم کر رہاہے۔ محکمہ صحت کے نجکاری کے عمل کو ابھی تک نہیں روکا گیا ہے۔ یہ گورنمنٹ ملازمین اور آنئندہ آنے والی نسلوں کا معاشی قتل ہے۔ محکمہ صحت کے ملازمین کا یہ متفقہ فیصلہ ہے کہ سرکاری وسائل کو اپنے من پسند ٹھکییداروں ، خریداروں اور نام نہاد کمپینیوں کو فراخت کرنے سے ہر صورت روکنا ہے۔

پوسٹ ٹیگز:

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*
*