سپریم کورٹ نے ہمیشہ آئین توڑنے والوں کو تحفظ دیا آئین کو نہیں :مخدوم جاوید ہاشمی

سپریم کورٹ نے ہمیشہ آئین توڑنے والوں کو تحفظ دیا آئین کو نہیں :مخدوم جاوید ہاشمی
ملتان(نمائندہ سرائیکستان ) مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ نے ہمیشہ آئین توڑنے والوں کو تحفظ دیا آئین کو تحفظ نہیں دیاعمران خان کی پارٹی سیاسی نہیں مافیا ہے آج کا دن پاکستان کی تاریخ کا سنہرا دن ہے کہ پاکستان کی پارلیمانی تاریخ میں دوسری بار پارلےمنٹ نے مدت پوری کی ہے اور سب کی امیدیں دم توڑ گئیں پوری قوم کو مبارکباددیتا ہوں کہ وہ یوم تشکر منائے اور شکرانے کے نوافل ادا کر و رنہ کوئی طالع آزما اٹھ کر عزیز ہم وطنو کا راگ الا پتا تھا خواہش ہے کہ کاش کوئی ایک وزیراعظم بھی اپنی مدت پوری کرسکتا لیکن مزید قربانیاں دینے کی ضرورت ہے تاہم اب بھی خطرات موجود ہیں ہم نے تہیہ کر لیا ہے کہ الیکشن 25جولائی کو ہی ہوں گے چاہے کتنی ہی قراردادیں منظور کرالیں انتخابات کو 25جولائی سے آگے لے جانے والی قوتیں کمزور ہیں وہ قوتیں پاکستان کو نقصان نہ پہنچائیں اور پیچھے ہٹ جائیں ایک اسد درانی نہیں بلکہ کئی اسد درانی نکل آئیں گے مسلم لیگ (ن) نے جسٹس (ر ) ناصرالملک کو ان کی خدمات کے پیش نظر نگران وزیراعظم نامزد کیا ناصر کھوسہ کھڑا ہوا تو نواز شریف کھڑا ہو گیا ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنی رہائش گاہ پی سی کالونی میں پریس کانفرنس کے دوران کیا مخدوم جاوید ہاشمی نے مزید کہا کہ ہمارے ملک کے بالغ سیاست دان روز پیش گوئی کرتے تھے کہ اگلے پنددرہ دن میں پارلیمنٹ ختم ہو جائے گی مارشل لاءلگ جائے گا جوڈیشل مارشل لاءلگ جائے گاان سب کی امیدیں دم توڑ گئیں ملک کے خلاف ہونے والی سازشوں سے وہ سارے آج اپنی ناکامیوں کا اعتراف کرنے پر مجبور ہو گئے ہیں پارلیمنٹ کو بچانے کے لئے خودکش حملہ آور کے بموں کے نیچے آنا پڑا عمران خان پوری طرح آلہ کار بن چکے تھے کہ وہ سپریم کورٹ کو استعما ل کریں گے ناصر الملک ہو گا یا کوئی بھی ہو گا وہ اسمبلی کو توڑنے کا پابند ہو گا میاں نواز شریف کو اقامہ پر قربانی دینا پڑی عمران خان، زرداری نے اسمبلی توڑنے کا وعدہ کیا تھا انتخابات ایک لمحے کے لئے 25جولائی سے آگے لے جانے والی قوتیں کمزور ہیں نواز شریف کا ووٹرنواز شریف کے ساتھ کھڑا ہو گیا ہے انہوں نے کہا کہ عمران خان نے اپنے کرتوتوں کی وجہ سے اپنے اوپر اقتدار کے راستے بند کر دیئے ہیں چاہیئے تو یہ تھا کہ وہ بہتر طریقے سے سیاست کرتے عمران خان کابچپنا جاتا ہی نہیں ہے جہاں اشارہ ہوتا ہے و ہیں چلا جاتا ہے عمران خان کی پارٹی سیاسی نہیں مافیا ہے پیشینگوئی کررہا ہوں کہ بہت جلد میری کتاب آرہی ہے کہ ابھی میں زندہ ہوں پاکستان زندہ رہے گا اس کو بھمبھوڑنے اور توڑنے والے مر جائیں گے ہمیں کوئی ووٹ دے یہ نہ دے ہم نے یہ جنگ لڑنی ہے ایک دن سب کہیں جاوید ہاشمی نے تحریک انصاف کو بچایا عمران خان کو بچایا ورنہ یہ آ ج بنی گالہ میں بند بیٹھا ہوتاسپریم کورٹ نے ضیالحق کے کہنے پر بھٹو کو پھانسی دے دی ضیاءالحق نے کہا کہ اگر ججز نے بھٹو کو پھانسی نہ دی تو وہ ملٹری کورٹ بنا کر پھٹو کو پھانسی دے دیں گے اس لئے سپریم کورٹ نے بھٹو کو پھانسی دی اوربھٹو کی پھانسی کی خوشی میں آصف علی زرداری سمیت دیگر نے مٹھائی بانٹی انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ نے ہمیشہ آئین کو توڑنے والوں کو تحفظ دیا آئین کو تحفظ نہیں دیا کسی بھی جوڈیشل سسٹم میں یہ با ت برداشت نہیں کی جاتی ہمارے چیف جسٹس صاحبان اس کا خود جواب دے سکتے ہیں ورنہ تاریخ جواب دیتی ہے انہوں نے کہا کہ ان تین سالوں میں ایک ایک چیز روز روشن کی طرح عیاں ہو گئی ہے کہ سپریم کورٹ نے نواز شریف کو کیوں نکالا سپریم کورٹ کی اپنی مجبوریاں ہیں پارلیمنٹ کو بچانا ضروری تھا بلوچستان اسمبلی توڑی گئی جس پر ملٹری کا نظام ہے عمران خان، زرداری نے بھی اسمبلی توڑنے کا وعدہ کیا تھا ناصر کھو سہ کو آپ جیل میں ڈال دیں یا نیب کا ان پر کیس بنے آئینی طور پر آپ پابند ہیں ان کو یہ اختیار قوم نے دیا ہے کہ یہ وزیراعلی ہوں گے ناصر کھوسہ نے دیکھا کہ ان کے خلاف پوری انتظامیہ کھڑی ہے وہ کیسے کھڑے ہوں گے تو نواز شریف کھڑا ہو گیا آج پھر بلوچستان کے وزیراعلی نے کہا ہے کہ انتخابات نہیں ہونے چاہیئں گرمیاں ہیں لوگ عمرہ پر گئے ہوں گے ہر ووٹر اپنے حق کے حصول کے لئے کھڑا ہو گیا ہے ہمارے ملک میں ایک کی حکومت نہیں ہو تی معین قریشی ، شوکت عزیز کے نام پر حکومت ہو تی ہے انہوں نے کہا کہ ائیر مارشل اصغر خان نے کہا کہ ہم نے چار لڑائیاں ہاری ہیں حالانکہ وہ میرے آئیڈیل تھے ہماری فوج جب پھنس جاتی ہے تو پھر معاملات کو سیدھا کرنے کے لئے سیاستدان ہی اپنا کردار ادا کرتے ہیں ملک کا وزیراعظم چیف ایگزیکٹو ہوتا ہے اسی لئے سب کو اس کا حکم ماننا چاہیئے دہشت گردی کا مسئلہ ہو یا سیلاب کا یاجب قوم مشکل میں ہو وزیراعظم عوام کا نمائندہ ہوتا ہے وہ جب بلائے تو وہ آئیں آپ اپنی بیرکس میں واپس چلے جائیں۔

پوسٹ ٹیگز:

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

*
*