جنگوں کا بھی قانون ھوتا ھے——منصور ہاشمی

[email protected]

چالیس سال میں یہ ساتواں غیر جنگی جہاز ھے جس کو مخالفت، اور جنون کی بھینٹ چڑھایا گیاھے۔ غیر جنگی لوگ، بوڑھے،بزرگ ،بچوں، خواتین،بیماروں، فصلوں حتی کہ جانوروں کو لڑائی اور جنگوں سے محفوظ رکھنے کا کہا گیا ھے اس کے لئے POC Mandate موجود ھے جس پر تمام گورنمنٹس کو کہا گیا ھے کہ وہ پابندی کریں۔ جہاز کوئی ایسی چیز ،سواری نہیں جس کو کسی کو معلوم نہ ھو، وہ جہاں سے اڑتا ھے وہاں گراونڈ کنٹرول، ٹریفک کنٹرول، سپیس کنٹرول ، راڈار، ایک جگہ سے دوسری جگہ ،یک ملک سے دوسرے ملک ، ائیرٹریفک کنٹرول، ٹرمینل کنٹرول اور معلوم نہیں کیا کیا ادارے اس کو مانیٹر کر رہے ھوتے ہیں اور ایک دوسرے سے رابطے میں ھوتے ہیں۔ سول ایوی ایشن سے لیکر ائیرپورٹ اتھارٹی تک سب اپنے آنے والے، جانے والے، لینڈ اور فلائی کرنےوالے جہازوں کا ڈیٹا وصول کر رہے ھوتے ہیں۔
اب یہ انتہائی واہیات اعلان ھوگا کہ کوئی ملک ایران سمیت یہ کہے کہ human error میں میزائل جہاز کو جا لگا ۔ یہ سادہ لوح لوگوں کو تو آپ بے وقوف بنا سکتے ہیں بناو بھائی ، لیکن آج جب عام آدمی کسی بھی فلائٹ کو نمبر ڈال کر اور اڑنے اور اترنے کی منزل ڈال کر جہازوں کی سمت اور لائیو سمت اور جگہ کا تعین کر سکتا ھے وہاں گورنمنٹس تو سب کچھ جانتی ہیں۔ اس صورت میں مسافروں کے جہاز کو اور جس میں آپ کے اپنے ملک ایران کے 82 ممبران/ شہری سفر کر رہے ھو ، بے فکر اور بے خبر مسافروں کو مار گرانا اور آنے والے دنوں میں سفر کرنے والوں کو panic پیدا کرنا انتہائی غیر ذمہ داری ھے۔

پوسٹ ٹیگز:

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*
*